- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

شھید بالاچ مولا بخش کی میت کے ساتھ احتجاجی کیمپ کو پانچ دن مکمل ہوگئے

115

تربت ( گوادر سٹی نیوز ڈیسک) شھید بالاچ مولا بخش کی میت کے ساتھ احتجاجی کیمپ کو پانچ دن مکمل ہوگئے، بالاچ مولا بخش کی بہن نجمہ کو مزاکرات کے نام پر کیمپ سے لے جاکر یرغمال بنانے کے خلاف احتجاجی کیمپ سے ریلی کا پورے بازار کا گشت۔

شھید فدا چوک تربت میں بالاچ مولا بخش کی سی ٹی ڈی کے ہاتھوں مبینہ قتل کے خلاف احتجاج کو پانچ دن پورا ہوگئے، مظاہرین کے مطابق پانچویں دن شھید بالاچ کی بہن نجمہ مولابخش کو ان کے شوہر اور بھائی مبینہ مزاکرات کے نام پر کیمپ سے لے گئے جو شام تک واپس نہیں آئے اس دوران فیملی کی طرف سے چند افراد نے میت کو دفنانے کے لیے احتجاج ختم کرنے کا فیصلہ کیا تاہم عوام نے یہ فیصلہ مسترد کردیا اور دوپہر کو احتجاجی کیمپ سے ایک بہت بڑی ریلی نکال کر احتجاج کیا۔

- Advertisement -

ریلی میں ہزاروں کی تعداد میں مرد اور خواتین کے علاوہ بچے شریک تھے۔ ریلی کے شرکا نے مین روڈ سے کمشنری روڈ اور وہاں سے چاکر اعظم چوک تک مارچ کیا جب کہ یہاں سے تعلیمی چوک سے گزر کر پسنی روڈ سے سینما چوک کے راستے دوبارہ احتجاجی کیمپ میں آئے۔

- Advertisement -

ریلی کے شرکا نے الزام لگایا کہ نجمہ بلوچ کو مبینہ طور پر دھونس دہمکی اور لالچ دے کر میت دفنانے کے لیے دباؤ ڈالا جارہا ہے، انہوں نے الزام لگایا کہ اس میں ڈسٹرکٹ کونسل کیچ کے چیئرمین کو استعمال کیا جارہا ہے، اس کے لیے فیملی کو زبردستی مزاکرات کے نام پر ڈرا دہمکایا گیا اور پیسوں کی آفر کی گئی، صبح سے نجمہ کو احتجاجی کیمپ سے مزاکرات کے بہانہ بلاکر یرغمال بنایا گیا۔

انہوں نے کہاکہ بالاچ مولا بخش کی میت اب ایک فیملی کی نہیں بلکہ قومی امانت ہے اس کا فیصلہ بلوچ قوم کرے گی کہ میت کو کب اور کیسے دفنانا ہے، کسی فرد یا خاندان کو ہرگز یہ اختیار اور اجازت نہیں ہے کہ وہ شھید بالاچ کی میت پر ملکیت کا دعوی کرے۔

انہوں نے کہا کہ بلوچ قوم کا اس بات پر اتفاق ہے کہ وہ جبر اور مظالم کے خلاف خاموش نہیں رہیں گے بلکہ اجتماعی قومی شعور کے ساتھ مزاحمت کرتے رہیں گے۔ بشکریہ ڈیلی ایگل کیچ

- Advertisement -

- Advertisement -

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

بریکنگ نیوز
گزشتہ سات دنوں سے پسنی کے پرانے واٹر بکس کو بجلی سپلائی کرنے والی ٹرانسفارمر میں خرابی، پانی کی سپلا... ایم پی اے گوادر مولانا ہدایت الرحمان بلوچ کی وزیر خزانہ و سیکریٹری خزانہ سے ملاقات آکرہ کور ڈیم سے جیوانی پائپلائن کی جوائنٹنگ کا کام شروع کر دی گئی ہے۔ مومن علی بلوچ نے ایکسئین پبلک ہیلتھ گوادر کے چارج سھنبال لیا. ہوشاپ میں ایم ایٹ سی پیک شاہراہ بند، ٹوکن مافیا نے انتظامیہ کو بلیک میل کرنا شروع کردیا، کارروائی کی... گوادر کربلا بن گیا، شدید گرمی میں شہری بوند بوند کو ترس گئے۔نیشنل پارٹی کے راہنما اور سابق تحصیل نا... گوادر کے عوام کو مصیبت کے وقت کھبی تنہا نہیں چھوڑئیں گے. رکن قومی اسمبلی این اے کیچ کم گوادر حاجی م... غلط منصوبہ بندیوں سے شہر کا اسٹرکچر تباہ ہوگیا۔گوادر سول سوسائٹی و رہنماؤں کا گوادر پریس میں سمینار ... گوادر میں زاہد المیعاد اور عیر معیاری اشیاء خوردونوش فروخت کرنے والوں کے خلاف چیرمین گوادر کے اقداما... گوادر ڈرینج سسٹم یا موت کا کنواں۔ مکران کوسٹل ہائی وے پر گوادر کے علاقے چھب کلمتی کے مقام پرایک تیز رفتار ایرانی پک اپ زمباد گاڑی ٹائر... پاکستان کوسٹ گارڈز کا خفیہ اطلاع پر گوادر کے ساحلی علاقے سربندر میں سرچ اپریشن 2 عدد بوریوں میں چھ... گزشتہ دنوں وندر کے مقام پر پنجگور کے طالب علموں کے ساتھ پیش آنے والا واقعہ کسی سانحہ سے کم نہیں ہے۔ع... سیلاب کو نہ روکیے رستہ بنائیے۔ ناصر رحیم سہرابی 27 فروری کو گوادر میں ھونے والی طوفانی بارشوں کے پانی تاحال ملا فاضل چوک اور اسکے ارد گرد کے گھروں ا...