- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

بلوچستان کی آبادی پر وفاق کو اعتراض ہے، الیکشن کمیشن انتخابات میں تاخیری حربے اپنا رہا ہے، سردار اختر مینگل

96

کوئٹہ (یو این اے) بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سابق وزیراعلیٰ بلوچستان سردار اختر جان مینگل نے کہا ہے کہ الیکشن کاآئینی وقت مقرر ہے الیکشن کمیشن انتخابات کی تاخیر میں آئینی بہانے بنا رہی ہے ،اس میں تاخیری حربے جمہوریت کیلئے نیک شگون نہیں ،پہلے6مردم شماریوں پر ہم نے اعتراض نہیں کیا اب ڈیجیٹل مردم شماری ہوئی ہے تو بلوچستان کی آبادی پر وفاق کواعتراض ہے کہ یہ آبادی زیادہ کیوں ہے ؟مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس میں چیئرمین سینیٹ (جونان ممبر ہے)سمیت نان ممبرز کوخصوصی دعوتیں دی گئی تھیںبلوچستان سے اتنی محبت تھی کہ میرعبدالقدوس بزنجو کیلئے اجلاس کو 6گھنٹے طول دیا گیا ،سیاسی کارکن استعفیٰ بھی دیں توان کی نظریات پارٹی سے جڑی رہتی ہے اور کوئی عہدہ انہیں قید نہیں رکھ سکتا ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔ سرداراخترجان مینگل نے کہاکہ عام انتخابات کی ذمہ داری الیکشن کمیشن کی ہوتی ہے نگران حکومت نگرانی کرتے ہیں اور بلوچستان میں کیا آپ کو یاد ہوگا فخر جی ابراہیم جب نگران وزیر اعظم تھے الیکشن کے اختتام پر انہوں نے بیان دیا تھا وہ مجھے آج دن تک یاد ہے کہ مجھے پتا نہیں کیا ہورہا ہے تو میرے خیال میں جو اصل نگران ہے ،ملک سمیت بلوچستان میں بھی انہی کی حکومت ہے بلوچستان میں تو حکومت اب تک نامکمل ہے جب مکمل ہوگی اورابھی تک کابینہ میں جولوگ شامل کئے گئے ہیں ان کا کسی نہ کسی سیاسی پارٹی سے تعلق ہے نگران میں ہمیشہ ہونا یہ چاہیے تھا مرکزی ہو یا صوبائی کابینہ کا کسی سیاسی جماعت سے تعلق نہ ہوں۔نگران وزیراعظم اس وقت رکن تھے اورحلف لینے کے بعد انہوں نے استعفا دیا ہے ،انہوں نے کہاکہ پارٹیوں میں رہتے ہوئے لوگ نظریاتی ہوتے ہیں اگر نظریاتی ہے تو استعفوں سے نظریات ختم نہیں ہوتے ان کا تعلق اور رشتہ ختم نہیں ہوگا جہاں تک الیکشن کا تعلق ہے ملک کاآئین کیا کہتا ہے اگر حکومت یا اسمبلیاں اپنی مقررہ مدت پوری کرتی ہے تو پھر 60دن میں الیکشن کرائے اگر وہ مدت پوری نہیں کرتی تو پھر 90دن میں الیکشن کرائے اگرہم نے اس آئین کی پابندی نہیں کی تو اس کا امید نہیں ہونی چاہےے کہ آنے والی حکومت بھی اس کی پاسداری نہیں کرے گی کیونکہ اسمبلیاں اپنے مدت سے پہلے تحلیل ہوگئی ہے تو 90دن میں الیکشن کمیشن کو عام انتخابات کا اعلان کردینا چاہیے انہوں نے کہا کہ ایک ہوتا ہے آئینی تقاضے اور ایک ہوتا ہے آئینی بہانے میں سمجھتا ہوں اب الیکشن کمیشن آئینی بہانے بنارہاہے آئین کی اگر ہم بات کرتے اور آئین پر لکھے ہر لفظ کی جو ہم پابندی کرتے تو ملک غیر جمہوری جو ہے اس میں زلزلوں میں مطلع نہ ہوتا ،انہوں نے کہاکہ جہاں تک مردم شماری کا تعلق ہے پہلے مرتبہ بلوچستان میں ہم سمجھتے ہیں فری اور فئیر مردم شمارئی ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ قومی اقتصادی کونسل کا اجلاس ہواتھا حکومت کے خاتمے کے چند روز قبل رکھی گئی تھی اس کا مقصد صرف اور صرف یہ تھا بلوچستان کی 73لاکھ کی جو آبادی ہے اس کو کم کرے آپ کو اتنا بھی پتا نہیںہے کہ بلوچستان کی لم سم آبادی کم کرے اور ہر ضلع کو کہا ہے کہ آپ پانچ لاکھ کم کردے اور آپ تین لاکھ آبادی کم کردے یہ بغیر دیکھے ہوئے کم کردیا ہے آپ کو ایک ضلع پر اعتراض ہے یا کسی ایک تحصیل پر اعتراض ہے یا کسی ایک بلاک پر اعتراض ہوسکتا ہے لیکن مجموعی پورے بلوچستان میں آپ کو کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیے پاکستان میں 6مرتبہ مردم شماری ہوچکی ہے ہم نے کسی ایک بھی مردم شماری پر انگلی نہیں اٹھائی آپ نے پینسل سے مردم شماری کرائی آپ نے فاونٹنگ پین یا بال پین سے کی ہے اب تو ڈیجیٹل مردم شماری ہوئی ہے اس پر بھی اعتراض ہے کہ بلوچستان کی آبادی زیادہ ہے اگر بلوچستان کی آبادی زیادہ ہے تو ان حقائق کو بھی آپ کو دیکھنا پڑے گا اور الیکشن کو ڈیلے کرنا یہ جمہوریت کیلئے نیک شگون نہیں ہے سی سی آئی کے اجلاس میں بلوچستان کا 73لاکھ آبادی کم کردی گئی ،بلوچستان کو اس سے کوئی فائدہ نہیں ہے ہم سی سی آئی کے ممبر نہیں ہے سی سی آئی کے اجلاس میں جو لوگ شامل تھے جن میں چیئر مین سینیٹ میر صادق سنجرانی جو کہ سی سی آئی کا ممبر نہیں ہے اور کچھ ہمارے ایم این اے ایز بھی بیٹھے تھے وہ بھی ممبرز نہیں ہے او ر کہیوںکو سپیشل دعوت نامے پر بلایا تھا یہ پہلی سی سی آئی اجلاس تھا جس میں نان ممبرز شریک ہوئے تھے ان کو بلوچستان سے اتنا محبت تھا وزیر اعلیٰ بلوچستان کیلئے سی سی آئی کا اجلاس 6گھنٹے تک ڈیلے کردیا انہوں نے کہا کہ نگران وزیر اعظم منتخب کرنا وزیر اعظم اور اپوزیشن لیڈر کا کام ہے لیکن ہم سمجھتے ہیں کہ کسی غیر سیاسی شخص کو نگران وزیر اعظم بنا نا چاہیے تھا اُس نگران وزیر اعظم کو بنا یا جو خود ایک سیاسی پارٹی کا رکن ہے میں نے میاں شہباز شریف کو کہا تھا کہ آپ کیئر ٹیکر وزیر اعظم بنائے نہ کہ انڈر ٹیکر وزیر اعظم بنا یا جائے اور پھر جمہوریت کے لئے قبریں کھودنا شروع کردے ۔

- Advertisement -

- Advertisement -

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

بریکنگ نیوز
گوادر میں زاہد المیعاد اور عیر معیاری اشیاء خوردونوش فروخت کرنے والوں کے خلاف چیرمین گوادر کے اقداما... گوادر ڈرینج سسٹم یا موت کا کنواں۔ مکران کوسٹل ہائی وے پر گوادر کے علاقے چھب کلمتی کے مقام پرایک تیز رفتار ایرانی پک اپ زمباد گاڑی ٹائر... پاکستان کوسٹ گارڈز کا خفیہ اطلاع پر گوادر کے ساحلی علاقے سربندر میں سرچ اپریشن 2 عدد بوریوں میں چھ... گزشتہ دنوں وندر کے مقام پر پنجگور کے طالب علموں کے ساتھ پیش آنے والا واقعہ کسی سانحہ سے کم نہیں ہے۔ع... سیلاب کو نہ روکیے رستہ بنائیے۔ ناصر رحیم سہرابی 27 فروری کو گوادر میں ھونے والی طوفانی بارشوں کے پانی تاحال ملا فاضل چوک اور اسکے ارد گرد کے گھروں ا... پسنی کے ساحل پر ایک سبز کچھوا مردہ حالت میں پایا گیا۔ کوئٹہ پریس کلب میں پیس اینڈ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام ایک روزہ ورکشاپ وزیرِ اعظم محمد شہباز شریف اور وزیراعلی بلوچستان میر سرفراز احمد بگٹی کا دورہ گوادر بلوچستان کے عوام کسی بھی مصبیت کی گھڑی میں خود کو تنہا محسوس نہ کریں۔وزیر اعلٰی بلوچستان ہزاروں مکانات پانی میں ڈوبے ہوئے ہیں، کشتیاں، گھر، دیواریں، مال مویشی اور دیگر اشیاء ضائع ہوچکے ہیں. ضلع کیچ کی سب تحصیل ہوشاپ سے پنجاب کے رہائشی پانچ افراد اغوا۔ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے رکن اور ملا فاضل چوک کے متاثرین نے حق دو تحریک کے سربراہ مولانا ہدایت الرحمن ک... گوادر، پریس کلب کی نومنتخب کابینہ ارکان نے اپنے عہدوں کا حلف اٹھالیا.