- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

پورٹ کو تعمیر ہوئے کئی سال گزر گئے مگر افسوس کی بات اس پر ہے کہ ابھی تک ہم گوادر باسیوں کو پینے کا پانی میسر نہیں.سید معیارجان نوری

27

محترم چیف آف آرمی اسٹاف پاکستان
محترم کورکمانڈر بلوچستان
محترم وزیراعظم پاکستان
محترم وزیراعلی بلوچستان
محترم گورنر بلوچستان

- Advertisement -

آپ تمام محترم حضرات سے گوادر کے کچھ اہم ایشوز پر عرض کرنا چاہتا ہوں، گوادر کو پاکستان کے ماتھے کا جھومر، سی پیک کا شہر کہا جاتا ہے جو کہ یقینا ایک اعزاز سے کم نہیں، ہم چاہتے ہیں اور دعا گوہ ہیں کہ ملک کی ترقی اور خوشحالی کے لئیے گوادر ایک اہم رول ادا کرے۔
گوادر میں بڑے بڑے میگا پروجیکٹس پر کام ہو رہا ہے جن میں سے کافی پروجیکٹس مکمل ہو چکے ہیں اور کچھ تکمیل کے مراحل میں ہیں۔ پورٹ کو تعمیر ہوئے کئی سال گزر گئے مگر افسوس کی بات اس پر ہے کہ ابھی تک ہم گوادر باسیوں کو پینے کا پانی میسر نہیں، تین بڑے ڈیموں کی موجودگی کے باوجود ہم گوادر باسی پیسے در در بھٹک رہے ہیں ہم سمجھتے ہیں کہ بحران مصنوعی ہے کیونکہ ڈیم پانی سے بھرے پڑے ہیں اور تینوں ڈیمز گوادر سے کنکٹڈ ہیں پھر کیا وجہ ہے کہ گوادر پیاسا مر رہا ہے
ایران سے بجلی کی مکمل سپلائی کے باوجود ہم گوادر باسی دس دس گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کے عزاب میں مبتلا ہیں
ہمارے سمندر کو ٹرالرز اور گجہ مافیا نے تباہ کیا ہوا ہے روزانہ کی بنیاد پر آکر ہمارے سمندر کو لوٹ رہے ہیں ہمارا ذریعہ معاش یہی ماہیگیری اور سمندر سے وابسطہ ہے اس کو بھی نہیں بخشا جارہا۔
محترم چیف صاحب آپ کو یاد ہوگا جب آپ گوادر تشریف لائے تھے تو میں نے آپ کے اور سابقہ وزیراعلی کے سامنے بھی اپنے مسائل گوشگزار کئے تھے اور آپ نے یقین دہانی کرائی تھی کہ مسائل پر غور کیا جائے گا۔
محترم ہمیں اس وقت زندگی کی بنیادی سہولیات بھی میسر نہیں ہیں جن میں پینے کا پانی، بجلی کی فراہمی سب سے اہم اور انتہائی بنیادی ضرورتیں ہیں۔
محترم صاحبان جب گوادر باسی انتہائی تنگ اور بیزاری کی عالم میں مجبوری کی عالم میں سڑکوں پر نکل کر احتجاج کرنے لگتے ہیں تب کہا جانے لگتا ہے کہ یہ شرپسند اور منفی لوگ ہیں سی پیک کے خلاف ہیں ترقی کے خلاف ہیں اور پھر ان پر ایف آئی آر اور کیس کئے جاتے ہیں، اب آپ محترم صاحبان ہمیں خود بتائیں ہم کریں تو کیا کریں، ہم گوادر باسی نہ ترقی کے خلاف اور نہ ہی شرپسند ہیں ہم ستائے ہوئے ہیں تنگ کئے ہوئے ہیں، ہم صرف اپنے بنیادی سہولیات کی مانگ کرتے ہیں جو کہ ریاست کی زمہ داری ہے،
گوادر میں ادارے موجود ہیں مگر نااہلی کی وجہ سے یا دانستہ طور پر عوام کو عزاب میں مبتلا کئے ہوئے ہیں جن میں جی ڈی اے ، کیسکو، پی ایچ ای، محکمہ فشریز سر فہرست ہیں۔
میں بحثیت چئیرمین ضلع کونسل گوادر آپ محترم حضرات سے گزارش کرتا ہوں کہ ہم گوادر باسیوں کی حالت پر ترس کھائیں اور ہمیں اس عزاب سے نکالیں-
امید کرتا ہوں کہ آپ میری گزارش پر خاص توجہ دینگے۔

- Advertisement -

سید معیارجان نوری
چئیرمین ضلع کونسل گوادر

- Advertisement -

- Advertisement -

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

بریکنگ نیوز
چین پاکستان دوستی ہسپتال‘‘ اور سمندری پانی کو قابل استعمال بنانے کے پلانٹ سمیت سی پیک منصوبوں سے گو... جی ڈی اے ہسپتال گوادر کے زیر اہتمام انڈس ہسپتال اینڈ ہیلتھ نیٹ ورک کا گوادر کے عوام کیلئے ایک اور ... نگراں وزیر اعلٰی بلوچستان میر علی مردان خان ڈومکی کا پاک چین فرینڈ شپ اسپتال اور ڈی سیلینیشن واٹر پل... بلوچ یکجہتی کمیٹی کی جانب سے تربت میں بالاچ مولابخش احتجاجی کیمپ کو کوئٹہ منتقل کرنے کا اعلان کردیا ... شھید فدا چوک پر ایک اور خاندان انصاف رسائی کے لیے پہنچ گیا۔ شھید بالاچ مولا بخش کا نماز جنازہ ہزاروں افراد کے مجمع میں ادا کردیا گیا۔ شھید فدا چوک پر نماز جنازہ... بلوچ یکجہتی کمیٹی کے رہنماؤں نے احتجاجی کیمپ میں بالاچ مولا بخش کی فیملی کے ہمراہ ایک ہنگامی پریس کا... مرکزی انجمن تاجران مکران کے کال پر کل بروز منگل 28 نومبر کو گوادر اور پسنی شہر میں مکمل شٹر ڈاؤن ہڑ... شھید بالاچ مولا بخش کی میت کے ساتھ احتجاجی کیمپ کو پانچ دن مکمل ہوگئے کل تربت سمیت مکران ڈویژن کے تینوں اضلاع میں شٹرڈاؤن ہڑتال کی جائے گی ڈپٹی کمشنر گوادر اور پی ڈی ایم اے کے ڈی جی جہانزیب خان کا پسنی میں بارش سے متاثرہ علاقوں کا دورہ پاک آرمی کی جانب سے گوادر کے طلباء کے کو مطالعے اور امتحانات کی تیاری کے بہتر مواقع فراہم پانچ دہائیوں بعد بھی گوادر کے بنیادی مسائل جوں کے توں ہیں. ظریف بلوچ بی این پی عوامی کی لیگل ٹیم اسلام آباد پہنچ گئی اور اسلام آباد ہائی کورٹ میں دائر رٹ پٹیشن جمع کردی ... دباؤ قبول نہیں، مکی مسجد تا ملا فاضل چوک روڈ متاثرین اپنے جائز مطالبات کے لیے متحد ہیں کوئی، مارکیٹ...